کینیڈا کے سکول سے 215 بچوں کی اجتماعی قبر برآمد

ایک دور تھا جب کینیڈا میں حکومت اور مذہبی حکام کے ذریعے چلائے جانے والے بورڈنگ اسکول میں قدیم مقامی نسل سے تعلق رکھنے والے بچوں کو والدین سے زبردستی علیحدہ رکھ کر نئی زبان اور جدید ثقافت اپنانے پر مجبور کیا جاتا تھا۔

1978 میں کینیڈا کا ایک سکول بند ہوا تھا جہاں سے اب 215 بچوں کی اجتماعی قبر برآمد ہوئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کینیڈا کے ایک سابق بورڈنگ اسکول سے اجتماعی قبر برآمد ہوئی ہے جس میں سے 215 بچوں کی باقیات نکالی گئی ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ یہ اسکول 1978 میں بند ہوگیا تھا اور برآمد ہونے والی باقیات سکول کے بچوں کی ہیں یہا ں پانچ سو سے زائد بچے تعلیم حاصل کرتے تھے اور انہیں مجبور کیا جاتا تھا کہ وہ اپنی نثقافت ترک کریں

یہ اسکول بنانے کا مقصد نئی ثقافت سے متعارف کروانا تھا پرانی ثقافت کی اصلی اور قدیم نسل کو جدید ثقافت کے تابع کرانے کے لیے بنایا گیا تھا

بچوں کی اموات کا وقت اور  وجوہات جاننے کے لیے تحقیق کی جارہی ہے

کینیڈا کے وزیر اعظم نے اس واقعے پر گہرے افسوس کا اظہار کیا اور کہا

” یہ ہمارے ملک کی تاریخ کے شرمناک باب کی دردناک یاد دہانی ہے ”

برٹش کولمبیا کے شہر کملوپس میں برادری کے سربراہ روزن کیسیمر نے کہا کہ ابتدائی کھوج میں ایک ناقابل تصور نقصان ہوا ہے جس کا اسکول کے انتظامیہ نے کبھی ذکر نہیں کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں